چکر کیوں آتے ہیں، جسم میں خطرے کی گھنٹی بج گئی

چکر آنے کی شکائتیں ایک عام شکایت ہے لوگ اکثر چکر آنے کی شکایت کرتے ہیں۔ چکر آنے کا شکار سب مرد، عورت، بچے اور بوڑھے ہوتے ہیں۔ لیکن اس بارے میں لوگوں کے پاس زیادہ آگاہی نہیں ہے۔ بعض اوقات چکر صرف سر میں آتے ہیں اور ہمیں شکایت ہوتی ہے کہ ہمارا سر گھوم رہا ہے اور بعض اوقات چکر پورے جسم کو ہلا دیتے ہیں۔

ورٹیگو اصل میں چکر کی بیماری ہے جس میں چکر کسی خاص پوزیشن میں آتے ہیں اور انسان اپنے جسم کہ بیلنس نہیں کر پاتا ایک دوسری جوقسم ہے اس میں انسان کو اس کا دماغ بھاری لگنے کی بجائے ہلکا محسوس ہو رہا ہوتا ہے جسے ہم عام الفاظ میں سستی کہتے ہیں۔ جس کے اندر بندے کا سر نہیں گھوم رہا ہوتا بلکہ سر ہلکا محسوس ہو رہا ہے اور جسم میں توازن صحیح سے برقرار نہیں رہتا۔

موشن سکنس تیسری قسم ہے چکر آنے کی جس میں انسان کو محسوس ہوتا ہے کہ ہر چیز اس کے اردگرد گھوم رہی ہے یا انسان محسوس کرتا ہے کہ وہ کسی ایسی چیز میں بیٹھا ہے جو گھوم رہی ہے۔ اس تمام بیماریوں میں انسان کا اٹھنا، بیٹھنا، لیٹنا مشکل ہوجاتا ہے۔

ہماری باڈی میں موجود ورٹیکل سسٹم جو ہماری حرکت کنٹرول کرتا ہے یہ صحیح سے کام نہیں کر رہا ہوتا جس سے انسان کے جسم میں بیلنس نہیں رہتا اور انسان کو چلنے، پھرنے، بیٹھنے میں دقت آتی ہے۔

ایسا ہوتا ہے کہ بعض اوقات انسان بلکل صحیح ہوتا ہے اس کو بولتے بولتے چکر آنے لگتے ہیں اور یہ کافی تکلیف دہ ہوتا ہے انسان کے لئے۔ انسان کو ایسے محسوس ہوتا ہے کہ اس کا آخری وقت آگیا ہے اور یہ فوراً ایمرجنسی روم میں لے جایا جاتا ہے۔ اگر اس کا مکمل علاج نہ کیا جائے تو ایسی صورتِ حال میں مریض کی ورٹیکل نروو کافی متاثر ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے جسم میں صحیح توازن برقرار نہیں رہتا۔ اگر اس بیماری کا صحیح اور مکمل طور پر علاج ہو جائے تو لوگ ٹھیک ھہ سکتے ہیں۔

ایک اور قسم میں فالج کے ساتھ چکر کی بیماری کا آنا ہے۔ اس بیماری میں انسان کے جسم کے حصے میں فالج ہونے کا خطرہ ہوتا ہے ایسے مریض کی فوراً MPI کرانی چاہیے۔

بعض دفعہ چکر کسی خاص پوزیشن میں آتے ہیں جیسے کہ کئی لوگوں کہ چلنے پھرنے سے نہیں بلکے لیٹنے سے چکر آتے ہیں یعنی ایک خاص کروٹ میں لیٹنے سے چکر آتے ہیں۔ ایسے خاص مریض اس بیماری میں مبتلا لوگ اس کروٹ میں نہیں لیٹتے جس میں انھیں چکر ٓئے۔ یہ بیماری کافی مختصر عرصے کے لیے رہتی ہے مثلاً ایک ہفتہ رہی اور بعد میں چلی گئی۔ زیادہ تر اس بیماری کا علاج دوائیوں سے ہوجاتا ہے۔ چکر کی بیماری کا علاج کے لیے 3طریقے زیادہ پراثر ہوتے ہیں جس میں سب سے پہلے دوائیں آجاتی ہیں جن کے استعمال سے ورٹیکلر سسٹم کافی حد تک کنٹرول میں آجاتا ہے۔ بعض اوقات زیادہ طویل علاج درکار ہوتا ہے۔ تیسرا طریقہ یہ ہے کہ لوگوں میں یہ یقیں دہانی کرائی جائے کہ یہ نارمل ہو اور مریض جلد ازجلد ٹھیک ہوجائیں گے۔ دواؤں اور ورزش سے ان بیماریوں کو صحیح کرسکتے ہیں اس لیے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ کیونکہ چکر خود بیماری نہیں ہے بلکے ایک علامت ہے۔

Spread the love
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں