جب آپ اللہ کے قریب ہوتے ہیں تو کیا ہوتا ہے۔

لوگ جو ایمان لاتے ہیں اور اچھے کام کرتے ہیں اور خرچ کرتے ہیں اور اللہ ان سے محبت کرتا ہے جو کچھ اللہ کرتا ہے اللہ ان سے وہ کام کرتا ہے جو آسان ہو اللہ ان کے لیے آسانیاں پیدا کرتا ہے جو اچھی بات ہے اللہ ان کے لیے آسان کر دیتا ہے۔ ان کے لیے وہ راستہ ہے جو اس کی خوشنودی حاصل کرے گا لیکن برائی کرنے والے وہ لوگ ہیں جو بخل کرتے ہیں جب دولت کی باری آتی ہے تو وہ خرچ نہیں کرتے جو اللہ نے ان کو دیا ہے اس میں سے نہیں دیتے ہم ان کے لیے مشکل بناتے ہیں یا ان کے لیے راستہ آسان کر دیتے ہیں۔

مشکل جو بھی ہو یہ مشکل اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ ہم اس شخص کے لیے مشکل کا راستہ آسان کر دیتے ہیں بس یہی وہ راستہ ہے جس پر وہ چلتے ہیں یہ اس شخص کے گناہوں کا نتیجہ ہے اور میں نے آپ کو دونوں قسم کے گناہ سمجھائے ہیں پھر ایک اور بہت ہی دلچسپ طاقتور خوفناک پوائنٹس بہت ڈراؤنے مطلب یہ ایک ایسی چیز ہے جس کے بارے میں آپ کو خطرے کی وجہ معلوم ہو جائے گی اگر آپ اللہ سے نہیں ڈرتے تو آپ اللہ کے علاوہ ہر چیز سے ڈرنا شروع کر دیتے ہیں اگر آپ نے اللہ کے خلاف زیادتی کی ہے تو آپ ان لوگوں کے بارے میں فکر مند ہونے لگتے ہیں جن کے بارے میں آپ پریشان ہونے لگتے ہیں ۔

جب بھی آپ کے پاس اللہ کا خوف ہے اور آپ نے اللہ کی ہدایت پر عمل کیا ہے اللہ آپ کے لیے کافی ہے اللہ ہی کافی ہے آپ کے پاس اللہ کا خوف ہے آپ سب کچھ ٹھیک کر رہے ہیں کوئی حرج نہیں ہے آپ کو فکر نہیں ہے آپ مسجد میں آکر توجہ مرکوز رکھیں کیا صلوٰۃ اپنی زیادہ سے زیادہ حد تک بہترین ہے آپ کر سکتے ہیں وجہ یہ ہے کہ آپ کو فکر کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے کہ آپ نے کیا کچھ غلط نہیں کیا میں نے کوئی غلط کام نہیں کیا میں یہاں آیا ہوں میں اتنا خوش انسان ہوں اللہ اکبر اور بس اللہ کے سوا کسی سے مت ڈرنا آپ کے پاس ہمیشہ ایک شخص ایک یا دو باتیں کہتا رہے گا جو منفی ہے ۔

لیکن ہم میں سے کوئی بھی اس سے نہیں بچ سکتا کیونکہ یہ اللہ کی آزمائش کا حصہ ہے جس کے بارے میں بات کی گئی تھی اور وہ جو کہتا ہے لیکن جب کوئی شخص گناہ کرتا ہے تو وہ پریشان ہوتا ہے کہ وہ اللہ سے نہیں ڈرتا، اللہ سے نہیں ڈرتا، وہ آتے ہیں، انتظار کرتے ہیں کہ یہ شخص کیا کہے گا کہ ایک شخص مجھے چوری کرنے والے شخص کو دیکھتا ہے، مثال کے طور پر وہ سوچتا ہے کہ کوئی ضرور کرے گا؟

اس کو دیکھا ہے کہ تم کیسے جانتے ہو اس شخص کو معلوم ہو سکتا ہے کہ یہ شخص کسی ایسے شخص کو تلاش کر سکتا ہے جس نے چوری کی ہو جس نے زنا کیا ہو، جس نے کوئی غلط کام کیا ہو اسے اللہ کی فکر سے زیادہ انسانیت کی فکر ہو، یہ برائی کا براہ راست اثر ہے۔ کہ ایک شخص محسوس کرتا ہے کہ میں اب بھی ایک مومن کہہ رہا ہوں کیونکہ دن کے اختتام پر ہم اپنے بھائیوں اور بہنوں پر یقین کرتے ہیں جیسے میں کہتا ہوں کہ میں اسے دوسری بار دہرا رہا ہوں جب تک کہ توبہ کے دروازے ہمیشہ کھلے رہتے ہیں انجام تک نہیں پہنچے ہم ابھی جی رہے ہیں سانس لے رہے ہیں ابھی سقراط تک نہیں پہنچے ہیں ہم میں سے ہر ایک کی موت کا مفہوم ابھی تک نہیں آیا اور دنیا ابھی ختم نہیں ہوئی تاکہ ہم اللہ کی طرف پلٹ سکیں اس لیے یاد رکھیں جتنا ہم اللہ سے ہوش میں آئیں گے اتنا ہی کم ہم باقیوں سے ڈریں گے اور جتنا اللہ سے کم ہوش کریں گے اتنا ہی ہم باقیوں سے ڈرنے لگیں گے آپ جانتے ہیں کہ ایک بہت ہی طاقتور نکتہ یہ ہے کہ جب ایک شخص گناہ کرنے لگتا ہے ۔

شیطان اس کے ساتھ مزید غصہ کرتا ہے ہیلو اللہ کہتا ہے کیا تم جاننا چاہتے ہو کہ جنات کون مصیبت میں آتا ہے کیا تم جاننا چاہتے ہو کہ شیاطین کون مصیبت میں آتے ہیں وہ جھوٹے اور گناہ گار کو تکلیف دیتے ہیں جس موضوع پر آپ بغیر سوچے سمجھے جھوٹ بولنا چاہتے ہیں فکر نہ کریں شاید آپ تھوڑی دیر کے لیے اس سے بچ جائیں لیکن جن مصیبت میں آجائیں گے آپ شیطان آ جائیں گے اور آپ کو تکلیف دیں گے آپ باتیں سننے لگیں گے کیا آپ سورۃ نہیں پڑھتے اللہ کہتا ہے پتہ نہیں کیا ہو رہا ہے آپ کو ایک آواز سنائی دینے لگتی ہے اوہ یہ اس لیے کہ میرے بھائی میری بہن یہ گناہوں کا اثر ہے جو سرزد ہو جاتے ہیں سب اللہ کی طرف پلٹ جاتے ہیں جو دور ہو جاتے ہیں سب اللہ کی طرف پلٹ جاتے ہیں سبحان اللہ وہ کھائیں جو حلال ہے اگر کوئی شخص حرام کھاتا ہے تو اسکیٹل اثر ہوتا ہے یہاں تک کہ وہ شخص افسردہ ہو جاتا ہے اور اس میں 30 سال لگ سکتے ہیں کہ 30 سال پہلے ہم نے 30 سال پہلے دو سال تک حرام کھایا اس نے ہم پر 30 سال تک اثر کیا۔

جب تک کہ ہم اللہ سے معافی نہیں مانگتے اور یہ تیسری بار ہے کہ میں یہ کہہ رہا ہوں کہ اللہ سے معافی مانگنا بہت ضروری ہے اس لیے میرے بھائیو اور بہنو اگر ہم شیطان کے وسیلہ سے جنوں اور جادو کے اثر سے محفوظ رہنا چاہتے ہیں۔ باقی سب کچھ آپ کو اللہ کے فرمانبردار ہونے کی ضرورت ہے اللہ کے اپنے احکام کو پورا کریں اکثر لوگ جو اس سب سے متاثر ہوتے ہیں آپ ان سے پوچھتے ہیں کہ کیا آپ نماز پڑھتے ہیں وہ کہتے ہیں نہیں کبھی نہیں کیا آپ دن میں چار بار اچھی طرح سے نماز پوری کریں گے؟ جب شیطان آپ پر اثر انداز ہو رہا ہے تو یہی ہے کہ اللہ ہمیں معاف کرے اور میں اللہ سے دعا کرتا ہوں کہ وہ ان تمام لوگوں کو شفا عطا فرمائے جو جدوجہد اور تکلیف میں ہیں جب ہم کہتے ہیں کہ کیا آپ نے قرآن پڑھا ہے کیا آپ نے آیت الکرسی پڑھی ہے تو جواب نہیں ہے کہ کیسے؟

آپ کو مدد کی امید ہے اللہ آپ کو یہاں ہمارے باڈی گارڈز بتا رہا ہے میں انہیں آپ کو دے رہا ہوں آپ کو صرف اتنا کرنا ہے کہ دروازہ کھولیں اور انہیں اندر آنے دیں آپ نے دروازہ کھولنے کی زحمت تک نہیں کی آپ کو دو منٹ لگیں گے۔ آیت الکرسی پڑھنے کے لیے دروازہ کھلا رہے گا سبحان اللہ میرے بھائیوں اور بہنوں ایک بہت اہم نکتہ جو ہم سیکھتے ہیں پھر میرے پاس دو نکات اور ہیں جو میں نمبر ایک کے بارے میں بات کرنا چاہوں گا جو گناہ کرتا ہے اور اللہ کی طرف رجوع نہیں کرتا۔ اس کے اثرات یہ ہوتے ہیں کہ اللہ ان کو بہت بری موت دیتا ہے بہت مشکل بہت بری موت اور اسے کہتے ہیں جس کا انجام بہت برا ہو گا کیا بری موت ہے میرے بھائیو اور بہنو یہ بری موت نہیں ہے جب آپ کو ٹکڑے ٹکڑے کر دیا گیا ہو یہ کوئی نہیں ہے۔

بری موت ایک بری موت اس حالت میں مرنا ہے کہ تم اللہ کو بھول گئے ہو وہ بری موت ہے اور اچھی موت ہے خواہ تم جانتے ہو کہ ٹکڑے ٹکڑے ہو گئے مجھے یہ مثال دیتے ہوئے افسوس ہے لیکن اگر تم اللہ کو یاد کرتے ہوئے مر گئے تو واہ واہ اگر اس دن آپ کا انتقال ہو گیا تو آپ نے اپنی صلاۃ سبحان اللہ پڑھی تھی اگر اس دن آپ کا انتقال ہو گیا تو آپ نے اللہ سے معافی مانگی الحمدللہ اگر اس دن آپ کا انتقال ہو گیا تو آپ نے صبح قرآن مجید کھولا اور آدھا صفحہ پڑھا، واہ آپ کو یہ خوشخبری ہے اچھا دن لیکن جب کوئی بندہ اللہ سے بہت دور چلا جاتا ہے تو آخری بار جب آپ نے قرآن مجید کھولا تو غلطی سے پچھلے رمضان میں تھا کیونکہ میں بہت شرمندہ تھا جب آخری بار آپ نے اپنی پانچ نمازیں ادا کیں تو پچھلے سال رمضان میں کیا تھا میرے بھائیو اور بہنوں آپ کو کس قسم کی موت کی امید ہے اگر آپ ابھی یہیں مر جائیں تو سبحان اللہ ٹھیک ہے مجھے لگتا ہے۔

کہ ہم سب خوش قسمت ہوں گے کیا ماشاءاللہ یہاں اللہ کے گھر میں نماز کو اچھی طرح ادا کرنے کا خوبصورت ٹائمنگ ہے اچھی علامت کچھ لوگ جمعہ پڑھنے کی زحمت گوارا نہیں کرتے کچھ آپ جانتے ہیں کہ اللہ ہمارے ساتھ ایسا نہ کرے کہ وہ صرف صلاۃ سبحان اللہ کے لیے آتے ہیں ہاں اس عید کو سبحان اللہ سال میں دو بار چاند نظر آتا ہے اور یہ کہ ایسا نہ ہو جو آخری وقت میں چاہتا ہوں۔ بھائیو! مجھے یاد نہیں ہے کہ میں نے آخری بار قبر میں بچھوؤں کے بارے میں کب سنا تھا جب آخری بار میں نے قبر کو تنگ کرنے اور سینے کو کچلنے اور اس میں موجود لوگوں کی ہڈیوں کے بارے میں سنا تھا، مجھے یاد نہیں ہے کہ میں نے آخری بار قبر میں سانپوں کے بارے میں کب سنا تھا۔

قبر مجھے یاد نہیں کہ میں نے آخری بار کب قبر میں چیخ کی آواز سنی تھی کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تھا کہ اگر انسان اسے سن لے تو وہ دفن نہیں ہونا چاہیں گے یہ حدیث ہے کہ کوئی یہ سننا پسند نہیں کرتا یہ گناہ کا اثر ہے اور جیسے کیونکہ اور جہنم کا عذاب لوگ اس کو سننا پسند نہیں کرتے جب لوگوں کو پھاڑ کر جلا دیا جائے گا اور اسے پیا جائے گا جو بالکل ابلتا ہے جو آنتوں کو مکمل طور پر تباہ کر دیتا ہے اور پھر عذاب کا مزہ چکھنے کے لیے نئے سرے سے تیار کیا جاتا ہے۔

کیا نہیں یہ برف کے تودے کا صرف ایک سرہ ہے اصل میں برف کا تولہ نہیں کیونکہ برف آپ کی مدد کرے گی لیکن ساتھ ہی ساتھ میرے بھائیو اور بہنوں ہمارے پاس سب سے بڑا تحفہ توبہ ہے اللہ سے معافی مانگیں اور پھر مسکرائیں اور اللہ کی رحمت پر امید رکھیں مسکرائیں امید رکھو زندگی صرف افسردہ نہیں ہے، یہ امتحان نہیں ہے، یہ امتحان کے بعد امتحان ہوگا یقیناً یہ چیلنجوں سے بھری ہوگی لیکن اللہ کی مدد سے آپ ان چیلنجوں میں سے ہر ایک سے نمٹ پائیں گے اس میں ایک سال دو سال لگ سکتے ہیں یا دس سال یا 30 سال مجھ پر بھروسہ کریں اللہ کی مدد سے آپ اس سے گزر جائیں گے آپ کبھی امید نہیں ہاریں گے یہاں تک کہ آخر تک عبادت کریں یورپ یورپ کی عبادت کرتے رہیں بغیر امید کے ہارے بغیر مایوس ہوئے آپ کی موت اللہ ہمارے لیے آسان کرے اللہ ہم پر رحم کرے جیسا کہ میں نے کہا توبہ کا دروازہ کھل گیا ہم اللہ سے معافی چاہتے ہیں ہم اس سب سے محفوظ رہیں گے ۔

Spread the love

اپنا تبصرہ بھیجیں