جب آپ روزانہ لونگ کھاتے ہیں تو آپ کے جسم کو کیا ہوتا ہے۔

ہر روز لونگ کھانے کے حیرت انگیز فوائد لونگ دنیا میں سب سے زیادہ استعمال ہونے والے مصالحوں میں سے ایک ہیں ان کی تیز خوشبو اور ذائقہ ہے جو انہیں گرم مسالہ اچار اور سالن جیسے بہت سے پکوانوں کے لیے ایک لازمی جزو بناتا ہے لونگ کے لیے مشہور ہیں۔ بہت سے صحت کے فوائد ہیں لونگ کو منہ کے چھالوں کے علاج کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے دانتوں کے درد، نزلہ زکام، کھانسی اور بدہضمی کے مسائل کے ساتھ ساتھ یہ جسم میں دوران خون کو بڑھانے کے لیے بھی جانا جاتا ہے۔

جو دماغ کے خلیوں سمیت تمام اہم اعضاء کو آکسیجن کی فراہمی کو بہتر بنانے میں مدد کرتا ہے جس سے دماغ کے مجموعی کام کو بہتر بناتا ہے۔ لونگ کو کچا کھایا جا سکتا ہے یا کھانا پکانے کے دوران کھانے میں شامل کیا جا سکتا ہے، آپ لونگ کو ابلتے ہوئے پانی میں پیس کر یا اپنی اسموتھیز یا جوس میں شامل کر کے ذائقے اور غذائیت میں اضافے کے لیے اس سے چائے بھی بنا سکتے ہیں ۔

نمبر ایک۔

بیکٹیریا کو مارنے کے لئے لونگ صرف نہیں ہے۔ ان کو پکا کر بیکٹیریا کو مارنے کے لیے بھی استعمال کیا جا سکتا ہے کیونکہ ان میں یوجینول ہوتا ہے جو کہ ایک قدرتی جراثیم کش ایجنٹ ہے جو بیکٹیریل انفیکشن سے لڑنے میں مدد کرتا ہے درحقیقت لونگ کو بطور اینٹی بائیوٹک استعمال کرنے کا بہترین طریقہ ان کی چائے بنا کر تین بار پینا ہے۔
روزانہ جب تک انفیکشن ختم نہ ہو جائے آپ اپنی صفائی کی مصنوعات میں لونگ کے تیل کے چند قطرے بھی شامل کر سکتے ہیں تاکہ جراثیم کو مارنے اور اپنے گھر کو صاف رکھنے میں مدد ملے لونگ ایک طاقتور جڑی بوٹی ہے جو انفیکشن اور بیکٹیریا کو کاٹتی ہے لیکن انہیں صرف اس وقت استعمال کرنا چاہیے جب ضروری ہو ان کے مضر اثرات ہوتے ہیں کیونکہ یہ جگر کو نقصان پہنچا سکتے ہیں اگر یہ زیادہ مقدار میں لیا جائے یا طویل عرصے تک لیا جائے ۔

نمبر دو۔

لونگ وٹامن اے اور سی کے بھرپور ذرائع ہیں یہ آئرن کا بھی ایک بڑا ذریعہ ہے جو کہ آکسیجن کی نقل و حمل میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ آپ کے جسم کے خلیات جب آپ کے خون میں آئرن کی مقدار ہو تو گہرے سانس لینے میں آسانی ہوتی ہے جب آپ ورزش کرتے ہیں یا کوئی ایسی سرگرمی کرتے ہیں جس کے لیے آپ کے پٹھوں کو اضافی آکسیجن کی فراہمی کی ضرورت ہوتی ہے اس سے آپ کو مزید توانائی ملتی ہے تاکہ آپ تھکے بغیر ورزش جاری رکھ سکیں۔

آسانی سے لونگ غذائی ریشہ سے بھی بھرپور ہوتی ہے جو آپ کو زیادہ دیر تک پیٹ بھرنے کا احساس دلانے میں مدد دیتی ہے اور ہاضمہ کی صحت کو فروغ دیتی ہے بالغوں کے لیے تجویز کردہ روزانہ کی مقدار 25 سے 30 گرام خواتین کے لیے اور مردوں کے لیے 38 گرام ہے اگر آپ اپنے فائبر کو بڑھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ قبض یا دیگر ہاضمے کے مسائل سے لڑیں اور لونگ کو اپنی غذا میں شامل کرنے کی کوشش کریں لونگ میں کولیسٹرول یا سوڈیم کی مقدار بھی نہیں ہوتی اس وجہ سے لونگ کو ہائی کولیسٹرول یا ہائی بلڈ پریشر والے لوگ محفوظ طریقے سے کھا سکتے ہیں یہ مینگنیج کا ایک بہت بڑا ذریعہ بھی ہیں جس کی ضرورت ہے۔

ہمارے جسموں کے ذریعے کاربوہائیڈریٹس چربی اور پروٹین سے توانائی پیدا کرنے کے لیے یہ ہارمونز جیسے ایسٹروجن پروجیسٹرون اور ٹیسٹوسٹیرون مینگنیج کی پیداوار میں بھی مدد کرتا ہے ہماری غذا سے کیلشیم جذب کرنے میں مدد کرکے مضبوط ہڈیوں کی تعمیر میں مدد کرتا ہے یہ اعصابی افعال دماغی افعال اور موڈ ریگولیشن کو بھی سپورٹ کرتا ہے۔ ہمارے جسموں کو ڈوپامائن پیدا کرنے میں مدد کرتے ہیں۔

نمبر تین ۔
انٹی آکسیڈنٹ لونگ میں اعلیٰ سطح پر اینٹی آکسیڈنٹس ہوتے ہیں جو کہ عمر سے متعلقہ حالات جیسے کہ الزائمر کی بیماری دل کی بیماری اور کینسر کے اینٹی آکسیڈنٹس آپ کے دماغ کو یادداشت کی کمی اور عمر بڑھنے سے وابستہ دیگر علمی مسائل سے بچانے میں مدد دیتے ہیں۔

متعدد اینٹی آکسیڈینٹس اور فلیوونائڈز جیسے quercetin اور تمام لونگ کے کیمپ میں پولی فینول بھی ہوتے ہیں جو ایسے مرکبات ہیں جو آزاد ریڈیکلز کو بے اثر کرکے جسم میں آکسیڈیٹیو تناؤ کو کم کرتے ہیں لونگ میں سب سے زیادہ وافر پولی فینول یوجینول ہے جس میں اینٹی آکسیڈنول پایا جاتا ہے۔

نمبر چار۔

بلڈ شوگر کو ریگولیٹ کرنے میں مدد مطالعات سے پتہ چلتا ہے کہ لونگ میں پایا جانے والا یوجینول مرکب لوگوں میں بلڈ شوگر کی سطح کو 56 فیصد تک کم کرنے میں مدد کرتا ہے لونگ میں پایا جانے والا یوجینول انسولین کی حساسیت کو بہتر بنانے اور خون میں گلوکوز کی سطح کو کم کرنے کے لیے ایک تحقیق میں دکھایا گیا ہے۔ ٹائپ 2 ذیابیطس کے ساتھ جنہوں نے آٹھ ہفتوں تک روزانہ ایک گرام پوری لونگ کھانے سے خون میں شوگر کی سطح میں نمایاں کمی واقع ہوئی ایک اور تحقیق میں لونگ کے تیل نے تین ماہ کے علاج کے بعد ٹرائگلیسرائیڈ کی سطح کو تقریباً 30 فیصد تک کم کیا، آپ لونگ کو چھڑک کر اپنی خوراک میں شامل کر سکتے ہیں۔

پکی ہوئی کھانوں کے اوپر آپ ایک برتن میں پانی اور چینی کو درمیانی آنچ پر ملا کر ایک سادہ شربت بھی بنا سکتے ہیں یہاں تک کہ چینی مکمل طور پر گھل جائے اس کے بعد ایک کپ شربت میں تین سے پانچ پورے لونگ ڈالیں اور اسے مکمل طور پر ٹھنڈا ہونے دیں۔ ضرورت ہو تو آپ اس شربت کو ایک ایئر ٹائٹ کنٹینر میں دو ماہ تک فریج میں رکھ سکتے ہیں ۔

نمبر پانچ ۔

کینسر سے بچانے میں مدد مل سکتی ہے لونگ میں سونف نامی مادے ہوتے ہیں جو ٹیومر کی نشوونما کو روک کر کینسر سے بچانے میں مدد دیتے ہیں اور کینسر کے خلیات کو دوسرے میں پھیلنے سے روکتے ہیں۔ ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ جو لوگ لونگ زیادہ کھاتے ہیں ان میں مثانے کے کینسر کا خطرہ ان لوگوں کے مقابلے میں کم ہوتا ہے جو لونگ بالکل نہیں کھاتے تھے یا کبھی کبھار ہی کھاتے تھے تاہم اس تحقیق میں صرف ان لوگوں کو دیکھا گیا جنہوں نے بہت زیادہ لونگ کھائی۔

طویل عرصے تک یہ واضح نہیں ہے کہ کیا لونگ کھانے سے کسی ایسے شخص میں مثانے کے کینسر کو روکنے میں مدد ملے گی جو انہیں کھاتے ہیں شاذ و نادر ہی ایک اور تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ یوجینول نے انسانی خلیوں پر لیبارٹری ٹیسٹوں میں غذائی نالی کے کینسر کے خلیوں کی نشوونما کو 50 فیصد تک کم کیا لیکن یہ واضح نہیں ہے کہ یوجینول غذائی نالی کے کینسر پر کیسے اثر انداز ہوتا ہے۔ انسانوں میں خطرہ یا لونگ کھانے یا لونگ کی چائے پینے سے یہ اثر حاصل کرنے کے لیے آپ کو کتنا یوجینول حاصل کرنے کی ضرورت ہے مزید تحقیق کی ضرورت ہے اس سے پہلے کہ کوئی نتیجہ اخذ کیا جا سکے کہ آیا یوجینول غذائی نالی کے کینسر کے خطرے کو کم کر سکتا ہے ۔

نمبر چھ۔

جگر کی صحت کو بہتر بنا سکتا ہے۔ لونگ سوزش کو کم کرکے اور انفیکشن یا دیگر ذرائع سے خراب ٹشو کی مرمت کرکے جگر کے افعال کو بہتر بنا سکتی ہے لونگ الکحل کے استعمال یا زہریلے کیمیکلز جیسے کاربن ٹیٹرا کلورائیڈ کی وجہ سے ہونے والے جگر کو پہنچنے والے نقصان سے بچا سکتی ہے جیسے کہ کاربن ٹیٹرا کلورائیڈ ری ایکٹو آکسیجن کی سطح کو بڑھا کر جگر کے خلیوں کو نقصان پہنچاتی ہے جو کہ مالیکیولز ہیں۔

آکسیجن کے ایٹموں پر مشتمل ہوتا ہے جو آسانی سے غیر مستحکم ہو جاتا ہے اور دوسرے مادوں کے ساتھ رد عمل ظاہر کرتا ہے رد عمل آکسیجن خلیوں کے اندر موجود خلیوں کی جھلیوں اور ڈی این اے کے مالیکیولز پہنچا سکتا ہے جو کہ جانداروں کے لیے ضروری اجزاء ہے۔

نمبر سات۔

دانتوں کی خرابی اور مسوڑھوں کی بیماری کو روکتا ہے ایک تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ جب لونگ کا تیل لگایا جاتا ہے جن لوگوں کو پیریڈونٹل بیماری تھی ان کے دانتوں کی سوزش اور خون بہنے میں 50 فیصد تک کمی آئی اس سے ان کے منہ میں بیکٹیریا کی افزائش کو کنٹرول کرنے میں بھی مدد ملی۔تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ یوجینول اور لونگ دانتوں کے درد کے درد کو کم کرنے میں مدد دیتے ہیں اور یہاں تک کہ ان کو شروع ہونے سے روکتے ہیں۔ لونگ کو فلورائیڈ یا کلوروہیکسیڈائن کے متبادل کے طور پر بھی استعمال کیا جا سکتا ہے جو کہ ماؤتھ واش کے دونوں عام اجزاء ہیں ایک تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ لونگ کا تیل پلاک اور مسوڑھوں کی سوزش کو کم کرنے میں اتنا ہی کارآمد ہے جتنا کہ کلورہیکسیڈین کا ایک فیصد محلول ہے۔

نمبر آٹھ ۔

معدے کے السر کو کم کر سکتا ہے۔ معدے کے السر اور دیگر ہاضمے کے مسائل کے علاج کے لیے صدیوں سے استعمال ہونے والا لونگ کا تیل معدے کے السر کا ایک موثر علاج ہے کیونکہ اس میں یوجینول پایا جاتا ہے جو کہ H pylori بیکٹیریا کی افزائش کو روکتا ہے لونگ میں quercetin اور rutin جیسے اینٹی آکسیڈنٹس بھی ہوتے ہیں جو آپ کے خلیات کی حفاظت کرتے ہیں۔ فری ریڈیکل نقصان جو جسم میں سوزش کا باعث بن سکتا ہے اور پیٹ کے السر سمیت بہت سی بیماریوں کا باعث بن سکتا ہے ۔

اس مقصد کے لیے لونگ کا استعمال کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ ہر روز لونگ کے تیل کے ایک یا دو کیپسول لیں جب تک کہ آپ کی علامات کم نہ ہو جائیں یا مکمل طور پر ختم نہ ہو جائیں۔ درد کو دور کرتا ہے لونگ دانتوں کے درد اور دانتوں کے دیگر مسائل بشمول مسوڑھوں کے درد کو دور کرنے میں مددگار ثابت ہوتی ہے درحقیقت لونگ کو قدیم زمانے سے دانتوں کے درد اور مسوڑھوں کی سوزش کے گھریلو علاج کے طور پر استعمال کیا جاتا رہا ہے ۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ لونگ میں اینتھول ایک مرکب ہوتا ہے جو درد کو دور کرنے کے لیے جانا جاتا ہے۔ خواص لونگ کو نزلہ اور فلو کی علامات کو کم کرنے کے لیے بھی استعمال کیا جا سکتا ہے اور ناک کے حصّوں اور سینوس میں بھیڑ کو ختم کر کے وہ ناک بھری ہوئی ناک کو صاف کرنے میں بھی مدد کر سکتے ہیں ۔

نمبرنو۔

کے ساتھ استعمال کیا جائے تو لونگ اسہال کے خلاف مددگار ثابت ہوتی ہے۔ یہ تیل آنتوں میں موجود بیکٹیریا کو ختم کرنے میں مدد کرتا ہے جو اسہال کا سبب بنتے ہیں اس میں سوزش کے خلاف خصوصیات ہیں جو اسہال یا دیگر معدے کے انفیکشن کی وجہ سے ہونے والی سوزش کو کم کرسکتی ہیں لونگ میں ایک اور اہم جز یوجینول ہے جو اینٹی بیکٹیریل خصوصیات رکھتا ہے اور اسہال کا سبب بننے والے نقصان دہ مائکروجنزموں سے لڑ سکتے ہیں۔

لونگ خاص طور پر ای کولی اور انسانی پاخانے میں پائے جانے والے دیگر بیکٹیریا کے خلاف موثر ہیں اس کے علاوہ مذکورہ صحت کے فوائد کے علاوہ لونگ اپنی میٹھی اور منفرد خوشبو کے لیے بھی مشہور ہیں جنہیں مختلف قسم کی مصنوعات جیسے پینٹنگ صابن بنانے میں استعمال کیا جاتا ہے۔ اور دیگر آرائشی اشیاء اگر آپ لونگ کی شفا بخش خصوصیات کا تجربہ کرنا چاہتے ہیں۔

تو انہیں اپنے ڈائٹ پلان میں شامل کرنا نہ بھولیں لونگ کے دیگر فوائد بھی ہیں جن کا اوپر ذکر کیا گیا ہے جو کہ کیٹوسس کو متحرک کرنے میں بہت بڑا کردار ادا کرتا ہے۔ جسم کی وہ حالت جو جسم کو وزن کم کرنے میں مدد دیتی ہے روزانہ ایک یا دو لونگ کو اپنی غذا میں شامل کرنے سے آپ کی چربی کو تیزی سے کم کرنے میں بھی مدد مل سکتی ہے تاہم اس کا زیادہ استعمال صحت کے مسائل کا باعث بن سکتا ہے اس لیے آپ کو اسے اعتدال میں لینا چاہیے ۔

Spread the love
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں