مکہ مکرمہ میں عرفات پہاڑ پر کالا جادو پایا گیا۔

عرفات کے پہاڑ پر ہی کالے جادو کے کچھ شواہد دریافت ہوئے ہیں اور یہ یقینی طور پر پہلی بار نہیں ہوا ہے کہ سعودی پولیس نے عرفات کے پہاڑ پر کچھ عجیب و غریب چیزیں دریافت کی ہیں جہاں وہ ہر سال حج کے موقع پر جمع ہوتے ہیں۔ عرفات کی پہاڑی وہی جگہ ہے جہاں نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنا آخری خطبہ دیا تھا جہاں قیامت کے عظیم دن ہم سب کو بلایا جائے گا اور سورج ہمارے سروں کے عین اوپر ہوگا، یہ وہ جگہ ہے جہاں عازمین حج دعائیں اور دعائیں مانگتے ہیں۔ حج کے حصہ کے طور پر سارا دن اللہ تعالیٰ کی طرف سے معافی مانگی جاتی ہے اور ہمیں زمین میں دبی ہوئی فحش چیزیں نظر آتی ہیں جن سے کچھ لوگوں کے شیطانی عزائم کا پتہ چلتا ہے جو شیطان کے ساتھی بن چکے ہیں آپ کے خیال میں یہ چیزیں بالکل ایسی تھیں اور ایسی کتنی اشیاء ہونی چاہئیں؟

وہاں زمین میں دفن ہے کہ ان چیزوں کے بارے میں کوئی نہیں جانتا جو عرفات کے پہاڑ پر پولیس نے دریافت کیں جن میں انسانی بالوں کے کئی گچھے طلسم اور کچھ دھاگے شامل تھے ایک چھوٹا سا تکیہ جس پر سوئیوں سے پھنسا ہوا تھا آپ کو معلوم ہے کہ سب سے عجیب اور خوفناک چیز کیا تھی؟ ان سب میں ایک انسانی آنکھ تھی بظاہر آنکھ دھات کی انگوٹھی میں لگی ہوئی تھی ذرا سوچئے سعودی عرب میں جادو ٹونے کا ایک خاص محکمہ ہے جو ایسے معاملات کو دیکھتا ہے اور اس سلسلے میں مجرموں کو سزا دیتا ہے اگر آپ گناہوں کے سمندر میں غرق محسوس کر رہے ہیں۔

جب آپ کا دل آپ کو اندر سے مسلسل دھڑکتا رہتا ہے تو یہ آپ کے خالق کی طرف سے واپسی کی کال ہے اگر آپ اپنے ایمان کو تازہ کرنے کے لیے صحیح سمت تلاش کر رہے ہیں تو آپ کے ایمان اور ایمان کو زندہ کرنے کے لیے ہماری سب سے زیادہ فروخت ہونے والی کتاب 100 دل کو چھو لینے والی کہانیاں ہونی چاہئیں۔ آپ کا سب سے افضل انتخاب ابھی پڑھنے کے لیے اس کا لنک نیچے دیے گئے ڈسکرپشن باکس میں ہے اس سال حج کے دوران سعودی پولیس نے ایک شخص کو پکڑا جو عجیب و غریب سلوک کر رہا تھا پولیس نے اس پر نظر ڈالی تو دیکھا کہ اس شخص نے کچھ چیزیں چھپائی ہوئی تھیں۔

اپنے حرم کے اندر جسے وہ بار بار باہر نکال رہا تھا وہ شخص بھی اس کی بیوی کے ساتھ تھا جب سعودی حکام اس شخص اور اس کی بیوی کو ایک طرف لے گئے اور تلاشی لی تو آپ کو یقین نہیں آئے گا کہ انہیں مردہ پرندے ان کے جسم کے مختلف حصوں کی گرہیں ملے۔ اور عربی میں کچھ آیات لکھی گئی تھیں آخر کار معلوم ہوا کہ یہ جوڑا کسی کالے جادو اور جادو ٹونے کے لیے تھا اسی طرح کے واقعات اس سے پہلے بھی ہو چکے ہیں کہ ایک سوڈان کی ایک خاتون اور ایک سعودی شخص کو دو الگ الگ مقدمات میں کالا جادو کرنے پر گرفتار کیا گیا تھا۔

ایک کیس میں سعودی پولیس کو اطلاع ملی کہ 50 کی دہائی کا ایک سعودی شخص جادو اور جادو ٹونے کی کچھ شدید شکلوں کے لیے ایک گھر کا استعمال کر رہا ہے، اسی طرح کے معاملے میں اعلیٰ عملے کو اطلاع ملی کہ ایک 44 سالہ سوڈانی خاتون بھی وہی کر رہی ہے۔ کرائے پر مکان خریدا اور کالے جادو کے لیے گاہک لے جا رہی تھی کہ پولیس نے تمام قوانین و ضوابط کے باوجود اسے گرفتار کر کے مزید تفتیش کے لیے حوالے کر دیا، یہ لوگ اکثر سعودی عرب خصوصاً حج کے دنوں میں آتے ہیں اور ایسے گھناؤنے جرائم کیوں کرتے ہیں؟

یہ کام دنیا کے سخت ترین اور مقدس ترین مقامات کعبہ میں کرنا پڑتا ہے کیونکہ بھائیو اور بہنو یہ شیطان کی اطاعت کے اعلیٰ ترین درجے اور اللہ تعالیٰ کی نافرمانی کے اعلیٰ ترین درجے کی نشاندہی کرتا ہے جو شیطان انسانوں کے لیے چاہتا تھا۔ شرک میں اللہ کے پاس جانے کی بجائے بلیک میجک میں ملوث ہوں یا اللہ نے جو کچھ دیا ہے اس پر شکر ادا کریں اور صبر کریں جب انسان کالا جادو کرتے ہیں تو شیطان ان شیطانی روحوں کو جو شیطان نے اس کے کام پر قبضہ کر لیا ہوتا ہے لیکن یہ روحیں اس کام کو انجام نہیں دیتیں۔ مولانا زاہد علی اسماعیل کے مطابق جادو کی ایک تعریف اس کو دوسرے غیر معروف علوم سے الگ کرنے کے لیے نجاست اور شیاطین کا استعمال ایک نتیجہ کو پورا کرنے کے لیے اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید میں سورۃ البقرہ میں واضح کیا ہے اور وہ اس پر عمل کیا جو حضرت سلیمان علیہ السلام کے دور میں شیطانوں نے پڑھا تھا یہ کافر سلیمان علیہ السلام نہیں تھے بلکہ شیطان کافر لوگوں کو جادو سکھاتا تھا اور جو بابل ہاروت اور مرود میں دو فرشتوں پر نازل ہوا تھا لیکن یہ دونوں فرشتے کسی کو نہیں سکھاتے جب تک کہ وہ یہ نہ کہیں کہ ہم جادو کی تعلیم دیتے ہیں۔

ایک آزمائش ہے اس لیے جادو کر کے ایمان نہ لاؤ پھر بھی ان سے وہ کچھ سیکھتے ہیں جس کے ذریعے مرد اور اس کی بیوی کے درمیان جدائی کا باعث بنتے ہیں لیکن اللہ کے حکم کے بغیر اس کے ذریعے کسی کو نقصان نہیں پہنچاتے اور لوگ یہ سیکھتے ہیں کہ ان کو کیا نقصان پہنچاتا ہے اور کیا کرتا ہے۔ انہیں کوئی فائدہ نہیں پہنچا لیکن بنی اسرائیل کو یہ ضرور معلوم تھا کہ جس نے جادو خریدا اس کے لیے آخرت میں کوئی حصہ غنیمت نہیں ہوگا جس کے بدلے انہوں نے اپنے آپ کو بیچ دیا کاش وہ یہ جانتے کہ اللہ تعالیٰ نے اس آیت میں واضح فرمایا ہے کہ جب کوئی شخص کالا جادو کرتا ہے یا شیطان کے پاس جاتا ہے کہ وہ کچھ کرائے تو گویا وہ اپنی روح شیطان کو بیچ رہا ہے اسی لیے شیطان پھر اس شخص سے معاہدہ کرے گا اور اسے کہے گا کہ وہ اپنی اطاعت اور وفاداری ثابت کرے۔

شیطان اللہ کی نافرمانی کرتا ہے اگر وہ اپنا کام کرے تو جادوگر اور شیطان ایک دوسرے کے لیے کام کرتے ہیں عبداللہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جس نے گرہ باندھی اور اس پر پھونک ماری اس نے جادو کیا اور جس نے جادو کیا اس نے شرک کیا اور جو کسی کاتب کے پاس گیا اس نے شرک کیا ۔ اس سے کسی چیز کے بارے میں پوچھتا ہے تو چالیس راتوں تک اس کی دعا قبول نہیں ہوتی، روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جس کو علم نجوم کی ایک شاخ چاہیے اس کے لیے جادو کے علم کی ایک شاخ کی ضرورت ہے جتنا ایک بڑھتا ہے تو اس کے ساتھ دوسری بھی بڑھ جاتی ہے۔ اسے ابوداؤد نے روایت کیا ہے اور اس کا سلسلہ سند مستند ہے ہمیں بھائیوں اور بہنوں کو مزید کیا چاہیے یہاں تک کہ تفریح ​​کے لیے زائچہ پڑھنے کی اجازت نہیں دی گئی اس میں کوئی ابہام باقی نہیں رہا بھائیوں اور بہنوں نے اس کی تمام ممانعتوں کے بارے میں سنا ہوگا۔

جادو ٹونہ توہم پرستی کھجور پڑھنا ٹیرو کارڈ پڑھنا یا زائچہ اور علم نجوم یہ تو ہم سب جانتے ہیں لیکن کیا آپ کو اندازہ ہے کہ جادو کی ممانعت میں نبیﷺ کس حد تک جا چکے ہیں اللہ کے رسول نے فرمایا کیا میں آپ کو جادو کے بارے میں نہ بتاؤں کہ یہ دم اٹھانا اور افواہ پھیلانا ہے لوگوں کے درمیان دشمنی افواہ اڑانا بھی جادو کی ایک قسم ہے جو جھوٹ اور جادو میں عام ہے یہ سب لوگوں میں فساد اور دشمنی کا باعث بنتے ہیں اور اللہ اور اس کے رسول نے مسلمانوں کو ناپسند فرمایا جو ایسا کرتے ہیں یہاں ایک اور دلچسپ بات یہ ہے کہ جادو کی ایک قسم ہے۔

نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اس کی اجازت دی ہے کہ ایک شخص نے قبیلہ تمیم کے ایک شخص پر تنقید کی اور پھر اس کی تعریف کی اس آدمی نے کہا کہ میں غصہ میں تھا تو میں نے سب سے برا کہا جو میں جانتا تھا اور پھر میں خوش ہوا تو میں نے جو کچھ کر سکتا تھا وہ کہا۔ تلاش کریں تو نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کچھ فصیح کلام جادو ہے لہٰذا فصاحت و بلاغت جادو کی ایک شکل ہے جو اسلام میں خوش آئند ہے قرآن کی سورہ میں اللہ تعالیٰ ہمیں کالے جادو اور جادو ٹونے سے پناہ مانگنے کا کہتا ہے کہ میں صبح کے رب کی پناہ مانگتا ہوں۔

اس چیز کے شر سے جو اس نے پیدا کی اور اندھیرے کے شر سے جب وہ ٹھہر جائے اور پھونکنے والوں اور گرہوں کے شر سے اور جب وہ حسد کرے تو ان آیات کو چیز یا دو سورتوں کے نام سے جانا جاتا ہے جو پناہ مانگتی ہیں۔ برائی سے حفاظت کی ایک صورت کے طور پر پڑھا جاتا ہے جس میں کالا جادو بھی شامل ہے بھائیوں اور بہنوں ایسے لوگوں کے پاس جا کر اللہ سے مانگنے کی بجائے کالا جادو کرنا بھی شرک کی اتنی ہی گھناؤنی شکل ہے ہم سب کو اپنے ایمان اور ایمان کو ایک پر رکھنا چاہیے۔ صرف قادر مطلق پرانے دینے والے اللہ تعالیٰ ہمیں اس پر پختہ اٹل ایمان رکھنے کی توفیق عطا فرمائے اور ہر قسم کے شرک سے ہماری حفاظت فرمائے۔

Spread the love

اپنا تبصرہ بھیجیں